Sunday, April 7, 2013

بلاگ پر سوشل میڈیا کے تیرتے ہوئے بٹن لگانا


آج کے دور میں بلاگ بنانا بہت آسان ہو گیا ہے، پاکستان میں ہی اب لاکھوں کی تعداد میں بلاگرز ہیں، گو کہ اردو بلاگرز کی تعداد کم ہے لیکن ہم بھی اپنی پہچان بنا چکے ہیں۔ بلاگ میں ایک مضمون لِکھ دینا اور پھر ایک اور لِکھ دینا اور پھر ایک اور، ایک اور، ایک اور...........

آپ اگر بلاگنگ کرتے ہیں، تو لازماَ یہ بھی چاہتے ہوں گے کہ لوگ آپ کا مضمون پڑھیں، اس پر اپنے خیالات کا اظہار کریں، اپنے دوستوں کو بتائیں۔ اب چاہے آپ جتنے مرضی مضمون تحریر کر لیں، جس موضوع پر چاہیں قلم اُٹھا لیں، مگر مجھے یا کسی دوسرے عام آدمی کو تو چھوڑیں، آپ کے بغل میں بیٹھے شخص کو بھی اس کا ادراک نہیں ہو پائے گا۔ آپ کو بذاتِ خود اسے بتانا پڑے گا کہ "میں نے ایک مضمون تحریر کیا ہے" آپ یہ مضمون پڑھیں۔

ظاہر ہے، جب آپ کوئی نیا مضمون تحریر کرتے ہیں تو کسی کو معلوم نہیں ہوتا کہ آپ نے ابھی ابھی کوئی مضمون تحریر کیا ہے، ہاں اگر آپ کے بلاگ کا کوئی قاری باقاعدگی سے آپ کے بلاگ کا مطالعہ کرتا ہے تو اُسے آپ کی تازہ تحریر کے بارے میں آپ کے بِن بتائے ہی معلوم ہو جائے گا، مگر کسی اور شخص کو تو کبھی بھی نہیں، اور ایسے میں آپ کی تحریر کو پڑھنے والے بہت ہی کم ہوں گے، آٹے میں نمک کے برابر۔

اِس لیے جب بھی آپ کچھ تحریر کرتے ہیں تو ایک بات کا خیال رکھیں کہ اُس کے بارے میں آپ کو خود ہی بتانا پڑے گا کہ آئیے اور میرے مضمون کا مطالعہ کیجیے۔ اب بات یہ اُٹھتی ہے کہ کِس کِس کو اور کِس طریقے سے بتایا جائے؟

اپنی تحریر کے بارے میں کِن لوگوں کو بتایا جائے، یہ ایک الگ موضوع ہے، ابھی ہم بات کرتے ہیں کہ لوگوں کو کِس طریقے سے بتایا جائے؟ تو اِس کے بہت سارے طریقے ہیں۔ آپ اپنے دوستوں/رشتہ داروں کو فون پر میسج کر سکتے ہیں، یا ای-میل کر سکتے ہیں، یا بنفسِ نفیس بھی بتا سکتے ہیں، لیکن جِن لوگوں کو آپ نہیں جانتے اُن کو بتانے کے لیے آپ کو کسی ایسی جگہ جانا ہو گا جہاں بہت سارے لوگ موجود ہوں۔ تو ایسی جگہ تو صرف "سوشل میڈیا" ویب سائٹس ہی ہو سکتی ہیں۔

یعنی کہ آپ کو اپنی تازہ یا پرانی تحاریر کو دوسرے لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا ویب سائٹس کا سہارا لینا پڑے گا۔ اب آپ چند ایک سوشل میڈیا ویب سائٹس پر اپنا اکاؤنٹ بنا لیں اور اپنی تحاریر ان ویب سائٹس پر شیئر کریں۔ ہر نئی تحریر کے لیے پہلی بار تو آپ کو خود ہی شیئر کرنا پڑے گا، لیکن سب کام آپ نے ہی تو نہیں کرنا، آخر کچھ ذمہ داری تو ہمارے قارئین کی بھی بنتی ہے نا! تو آپ کچھ ایسے اقدامات کریں کہ آپ کے قارئین آپ کی تحریر کو دوسروں کے ساتھ شیئر کرنے کے قابل ہو جائیں۔ لیکن آپ کو قارئین کے لیے یہ سہولت ہر جگہ بہم پہنچانی ہو گی، تا کہ قارئین کو آپ کی تحریر شئیر کرنے میں دشواری پیش نہ آئے۔

ایک بہت اچھی بات یہ ہے کہ ایسا کرنے کے لیے کچھ سکرپٹس/کوڈز موجود ہیں جو آپ کے اس کام کو بہت ہی آسان کر دیتے ہیں۔ آپ اِن سکرپٹس/کوڈز کی مدد سے اپنے بلاگ کو مختلف سوشل میڈیا ویب سائٹ کے شئیرنگ بٹنوں کے ساتھ مزین کر سکتے ہیں، اور آپ کے قارئین اپنی مرضی کی سوشل ویب سائٹ کا بٹن استعمال کر کے آپ کی تحریر اس ویب سائٹ پر شئیر کر سکتے ہیں۔ ایسا کرنے کے لیے ایک بہترین سکرپٹ/کوڈ موجود ہے جو کچھ سوشل ویب سائٹس کے بٹنوں کی ایک لسٹ آپ کے بلاگ کے دائیں یا بائیں طرف آویزاں کر دیتا ہے، جو ہر وقت اور ہر مضمون پر نظر آ رہی ہوتی ہے۔ اور آجکل بلاگرز کی بڑی تعداد یہی سکرپٹ/کوڈ استعمال کرتی ہے۔ تو آئیے اب آپ کو اس کوڈ اور اس کے استعمال کا طریقہ بتا دوں:

1. سب سے پہلے اپنے بلاگ کے Dashboard پر جائیں
2. اب Layout پر کلِک کریں
3. اب وہاں پر کسی بھی جگہ Add a Gadget پر کلِک کر لیں
4. ایک نئی ونڈو کھلے گی، اُس میں سے HTML/JavaScript پر کلِک کریں
5. اب ایک اور خالی ونڈو کھل جائے گی
6. اب آپ ایک ویب سائٹ (www.addthis.com)  کھولیں
7. یہاں A Website والے آپشن کو چُنیں (جیسا کہ نیچے تصویر میں دکھایا گیا ہے)
8. پھر سوشل ویب سائٹس کے بٹنوں کی اپنی مرضی کی ترتیب چُنیں
9. اس کا Preview دیکھ لیں
10. اب Preview کے خانے کے نیچے اس کے مخصوص کوڈ کو کاپی کر لیں
11. اب آپ واپس HTML/JavaScript والی ونڈو میں آ جائیں اور کاپی کیا ہوا کوڈ اس میں لکھ (Ctrl + V) دیں
12. اب آپ اس کو محفوظ کرلیں (محفوظ کرنے کا بٹن نیچے ہو گا)
13. اب آپ اپنے بلاگ کا Preview دیکھیں، آپ کا کام پورا ہو چکا ہو گا۔


آپ اس کوڈ میں اپنے بلاگ کے تھیم کے مطابق مندرجہ ذیل تبدیلیاں کر لیں:

1. سوشل ویب سائٹس کے بٹن پہلے بائیں طرف ظاہر ہوں گے، آپ اِن کو دائیں طرف آویزاں کر سکتے ہیں، کوڈ میں left کی جگہ right لکھ کر۔
2. سوشل ویب سائٹس کے بٹنوں کی تعداد 4 ہو گی، آپ یہ تعداد بڑھا بھی سکتے ہیں۔


تو دوستو! آج کا کام مکمل ہوا۔ اُمید ہے اب آپ اپنی تحاریر کی تشہیر باآسانی کر لیا کریں گے اور اپنے قارئین کو بھی آسانیاں بہم پہنچا سکیں گے، اُمید کرتا ہوں کہ آپ اپنے قیمتی "خیالات" کا اظہار ضرور کریں گے۔

0 تبصرے :

Post a Comment

میرے مہمان

 

Copyright 2008 - All Rights Reserved by Brian Gardner Converted into Blogger Template by Bloganol dot com converted to urdu by urdujahan.com and وسیم نامہ